عمر بلال کی سال گرہ

امریکا پلٹ صحافی عمر بلال کی سالگرہ یوں تو سات دسمبر کو ہوتی ہے۔ لیکن اس کی تقریبات سارا سال ہی جاری رہتی ہیں۔IMG-20181208-WA0017
ملکی اور بین الاقوامی سطح پر سات دن تک جشن منایا جاتا ہے۔ اس سلسلے میں ملک کے تمام شہروں کے ساتھ ساتھ نیویارک، لندن، ٹوکیو، مشرق وسطیٰ اور آسٹریلیا میں بھی تقاریب منعقد کی جاتی ہیں۔
اس موقع پر سرکاری عمارات پر چراغاں کیا جاتا ہے اور قومی پرچم سرنگوں رکھا جاتا ہے۔
عمر بلال کی بڑھتی عمر کی وجہ سے بہت زیادہ موم بتیاں جلائی جاتی ہیں، جس کی وجہ سے موم کی قلت پیدا ہو جاتی ہے۔ فوری طور پر موم دوسرے ممالک سے درآمد کرتا پڑتا ہے، جس کے بعد ملک میں زر مبادلہ کے ذخائر بھی خطرناک حد تک کم ہو جاتے ہیں۔ اور موم بتیاں جلانے سے دنیا بھر میں آکسیجن کی قلت اور دھویں کی زیادتی ہو جاتی ہے۔
کروڑوں کی تعداد میں کیک ہلال کیے جاتے ہیں۔ بیکریاں ڈبل شفٹوں میں کام کرتی ہیں لیکن پھر بھی مانگ پوری کرنے میں ناکام رہتی ہیں۔ کیک کی تیاری میں استعمال ہونے والی چینی سے تمام شوگر ملوں کا اسٹاک ختم ہو جاتا ہے اور وہ گنا مالکان سے مزید گنا منہ مانگے داموں خریدنے پر مجبور ہو جاتے ہیں۔ یوں کسانوں پر بھی خوش حالی آ جاتی ہے۔
سال گرہ پر بین الاقوامی صحافیوں کرسٹینا امان پور، اینڈرسن کوپر اور دیگر نے واٹس ایپ پر مبارک باد کے ویڈیو پیغام بھیجے۔ اوپرا ون فری نے اپنا ایک شو عمر بلال کے نام کیا۔ بین الاقوامی برطانوی نشریاتی ادارے کے صحافی عماد خالق نے بھی تقریب میں شرکت کی.
عمر بلال کی عمر گزرتی جا رہی ہے اور اس ویڈیو کی ریکارڈنگ تک وہ کنوارے ہی ہیں۔ اس غم میں کئی دوست دبلے ہو
چکے ہیں۔۔ اس خدشے کے باعث کہ کہیں عمر بلال شادی کر ہی نہ لیں، کئی خواتین نے ہاتھوں کی چوڑیاں توڑ کر ان کا شیشہ پیس کر کھا لیا ہے۔ کئی نے زہر کھایا اور کئی کودنے کے لیے بلند عمارتوں پر چڑھ گئیں۔
اس پر مسرت موقع پر محکمہ ڈاک نے دو روپے کا یادگاری سکہ جاری کیا۔ قومی اسمبلی میں قرار داد پیش کی گئی کہ اسٹیٹ بینک سو روپے کے نوٹ پر بھی عمر بلال کی تصویر چھاپے۔
عمر بلال چونکہ اس جماعت کے حامی ہیں جو ووٹوں کے بجائے بوٹوں سے اقتدار میں آئی۔ لہزا ان کی سالگرہ کی خوشی میں راولپنڈی صدر کے قریب اور اسلام آباد آب پارہ مارکیٹ کے قریب اکیس اکیس توپوں کی سلامی دی گئی۔ ان کی طویل عمر کے لیے شاہراہ دستور کی ایک عمارت میں انصاف نامی دیوی کو قربان کر کے صدقہ دیا گیا۔ حکومت نے قیدیوں کی سزا میں کمی کا اعلان کیا اور قذافی اسٹیڈیم لاہور میں عمر بلال کے نام سے ایک انکوژر بنانے کا فیصلہ بھی کیا گیا۔

Advertisements

جواب دیں

Fill in your details below or click an icon to log in:

WordPress.com Logo

آپ اپنے WordPress.com اکاؤنٹ کے ذریعے تبصرہ کر رہے ہیں۔ لاگ آؤٹ /  تبدیل کریں )

Google+ photo

آپ اپنے Google+ اکاؤنٹ کے ذریعے تبصرہ کر رہے ہیں۔ لاگ آؤٹ /  تبدیل کریں )

Twitter picture

آپ اپنے Twitter اکاؤنٹ کے ذریعے تبصرہ کر رہے ہیں۔ لاگ آؤٹ /  تبدیل کریں )

Facebook photo

آپ اپنے Facebook اکاؤنٹ کے ذریعے تبصرہ کر رہے ہیں۔ لاگ آؤٹ /  تبدیل کریں )

Connecting to %s