آپ کس قسم کے ڈرائیور ہیں

لہراتے، بل کھاتے، بلبلاتے، اٹھلاتے، آنکھیں دکھاتے اور دل کو جلاتے۔۔۔جب سڑکوں پر جائیں، ان افراد سے پالا پڑتا ہے۔ ان حضرات کو عرف عام میں ڈرائیور کہا جاتا ہے، لیکن نوعیت اور خصوصیت کے اعتبار سے ہم نے انہیں مندرجہ ذیل اقسام میں تقسیم کیا ہے۔
بے کل  ڈرائیور: بے کل ڈرائیور کو بے عقل ڈرائیوربھی کہاجاسکتا ہے۔ان  کی ہمشیرہ کسی کے ساتھ دوڑ گئی ہوتی ہے، اور وہ ان کا پیچھا کر رہے ہوتے ہیں۔ اسی لیے اشارہ کھلنے سے پہلے ہی ریس پر پیر اور ہارن پر ہاتھ رکھ لیتے ہیں۔ انہیں ڈر ہوتا ہے کہ سگنل کی بتی پیلی ہونے سے پہلے پہلے کہیں ان کی ہمشیرہ اپنے ہاتھ نہ پیلے کر لے۔
مجبور ڈرائیور: یہ حضرات یا تو عادت سے مجبور ہوتے ہیں، یا پھر خارش سے۔ کبھی سیدھی گاڑی نہیں چلاتے۔ شاید تعلق خاص بازار کی بالائی منزل سے ہوتا ہے، اسی لیے گاڑی چلانے کو بھی رقص کرنے جیسا سمجھتے ہیں۔
سالے ڈرائیور: یہ کسی ٹریفک وارڈن یا اعلیٰ افسر کے سالے ہوتے ہیں۔ جہاں کہیں قوانین کی خلاف ورزی پر پکڑا جائے، یہ اپنے بہنوئی کو فون ملا دیتے ہیں۔ ٹریفک کے پچاس فیصد مسائل کے ذمہ دار یہ ہوتےہیں، باقی پچاس فیصد کی ذمہ داری ان کےبہنوئیوں پر عائد ہوتی ہے۔ کو پڑھنا جاری رکھیں