دھرنوں سے براہ راست

دو رہنما پارلیمنٹ ہاؤس کے باہر دھرنا دیے ہوئے ہیں۔ دونوں سارا دن اپنے اپنے کنٹینر میں اے سی لگا کر بیٹھے رہتے ہیں اور جس عوام کے لیے وہ انقلاب یا آزادی لانا چاہتے ہیں، وہ کڑکتی دھوپ میں سڑتی رہتی ہے۔ دونوں کی اولادیں ان دھرنوں میں شریک نہیں (شاید وہ بھی کسی ٹھنڈے کمرے میں ٹانگیں پسار کر دھرنے کی کوریج دیکھ رہی ہوں)، لیکن یہاں موجود کئی بچے ان کے کنٹینرز کو حسرت سے دیکھتے ہیں۔ کو پڑھنا جاری رکھیں

Advertisements