آپ نرگس تو نہیں؟

یہ اقتسابات مبارک حیدر کی کتاب "تہذیبی نرگسیت” کے ایک باب سے لیے گئے ہیں۔ پڑھنے کے بعد فیصلہ کریں، کیا آپ خود یا آپ کے اردگرد موجود افراد تو اس کاشکار نہیں؟
نرگسیت خود پسندی کو کہتےہیں، اور کسی شکل میں یہ مرض بھی بن جاتی ہے۔ اس مرض کا شکار لوگ اردگرد کی دنیا میں اذیت اور تباہی کا باعث بنتے ہیں۔
کسی تنظیم کی اجتماعی کارکردگی میں کسی ایک شخص کی حد درجہ بڑھی ہوئی خودپسندی اور جارحانہ انا پرستی ایسی رکاوٹیں اور الجھنیں پیدا کردیتی ہے جس سے تنظیم کو نقصان پہنچتا ہے۔ متعلقہ شخص کو نہ تو اس کا احساس ہوتا ہے نہ ہی وہ احساس دلائے جانے پر اپنی اذیت ناک کوتاہی کو قبول کرتا ہے۔ پڑھنا جاری رکھیں

Advertisements