عورت کی عزت کرنا مرد کی ذمہ داری

رعایت اللہ فاروقی صاحب صحافی اور کالم نگار ہیں۔ کچھ دن قبل انہوں نے فیس بک پر ایک پوسٹ لکھی، عنوان تھا۔۔۔ عورت اور مرد کی عزت کا فرق۔
رعایت اللہ صاحب کے مطابق ہماری بہنوں اور بیٹیوں میں یہ سوچ پیدا کرنے کی کوشش کی جا رہی ہے کہ عزت ایک بیڑی ہے، اگر مرد منہ کالا کرتا ہے تو خاتون کو بھی منہ کالا کرنے کی آزادی دی جائے۔
عاجز کو اس پوسٹ کے مندرجات سے اختلاف ہے۔ شاید ہی کوئی ایسا سوچتا ہو کہ مرد منہ کالا کرتا ہے تو عورت کو بھی ایسا کرنے کی آزادی دی جائے۔ ہماری رائے میں اس کا تعلق آزادی سے نہیں، ذمہ داری سے ہے۔ یعنی مرد منہ کالا کرتا ہے تو بھی عورت کو ہی ذمہ دار کیوں قرار دیا جائے۔ اکثر ان معاملات میں ذمہ داری کا تمام بوجھ عورت پر ڈال کر مرد سے وہ رویہ نہیں رکھا جاتا جو عورت سے رکھا جاتا ہے۔ کبھی یہ سننے میں نہیں آیا کہ غیرت کے نام پر باپ نے اپنے بیٹے کو قتل کر دیا ہو وغیرہ وغیرہ۔۔۔
آگے چل کر رعایت اللہ صاحب لکھتے ہیں
"یعنی اگر مرد بےغیرت ہے تو عورت کو بھی بےغیرت ہونا چاہیے”
ہماری نظر میں اس استدلال کو یوں بیان کیا جائے تو زیادہ مناسب رہے
"عورت بے غیرت ہے تو اس معاملے میں برابر کا کردار ادا کرنے والا مرد بے غیرت کیوں نہیں؟” کو پڑھنا جاری رکھیں